Posts

Featured Post

Quran Subjects قرآن – مضامین

The Qur’an the well preserved, last book for guidance of humanity, contains more than six thousand verses encompassing hundreds of topics. To properly comprehend and to ponder over a subject, one has to fully understand it. To facilitate the reader in understanding the Quran and to spread it, Quran Subjects – Web Network” has been launched, comprising Blogsites, FB Page, Twitter and Flipboard Magazine, here are the links. ... [keep reading.....]
قرآن مجید واحد کتاب ہے جو پوری انسانیت کے لیےقیامت تک رہنمائی اور ہدایت کا ذریعہ ہے،اللہ تعالیٰ نے اس کتابِ ہدایت میں انسان کو پیش آنے والے مسائل کے حل کو تفصیل سے بیان کردیا ہے. موجودہ دور میں ہرشخص دنیاوی آسائشات عوام کےحصول میں مگن ہے، قرآن کو تلاوت کرتے ہیں اور ہر ایک لفظ پرثواب حاصل کرتے ہیں ، کچھ لوگ ترجمہ بھی پڑھتے ہیں ، مزید گہرائی میں جانے کے لیے مفسرین نے تفاسیر لکھیں ہیں، مگر دنیوی مصرفیات کی وجہ سے اکثر قرآن پر تدبر و فکر سے محروم رہتے ہیں ، "قرآن مضامین QURAN SUBJECTS" " اسی طرف کوشش ہے...پڑھتے جائیں  .....[.........…

Coronavirus Myths ، facts and Prevention کورونا وائرس- حقائق ، خرافات اور سازش کے نظریات

Image
دعوی - افواہ : ابلتے ہوئے پانی ، نمک اور سنتری کے چھلکے کے مرکب سے بھاپ کو سانس لینے سے نئے کورونا وائرس کی روک تھام یا افاقہ ہوگا۔ COVID-19 - Authentic information , Questions and answers ...WHO ... >>>کوویڈ ۔19 : اہم ترین مستند معلومات ، سوالات اور جوابات... ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن .... >>>> حقائق: بھاپ وائرس کی علامتوں کو راحت بخش ثابت کرسکتی ہے ، لیکن یہ اس کی روک تھام یا علاج نہیں کرے گی۔ فیس بک اور ٹویٹر پر بڑے پیمانے پر گردش کرنے والی فوٹو اور ویڈیو پوسٹوں میں ، لوگوں کو بھاپ میں سانس لیتے ہوئے مرکب سے بھرے ہوئے ابلتے پانی کے ایک برتن پر کھڑے دیکھا جاسکتا ہے۔ کچھ معاملات میں ، کٹی ہوئی پیاز سے خوشبو دار تیل تک دوسری اشیاء شامل کی گئی ہیں۔ ویڈیو کی مختلف حالتوں سے سوشل میڈیا پر ہزاروں آراء موصول ہوئیں۔ "بھاپ سی نمک اور اورینج کے چھلکے۔ بھاپ کو 15 منٹ کے لئے سانس لیں۔ فرض کریں کہ کورونا وائرس کو جسم میں داخل ہونے سے روکیں۔ اس کو سوشل میڈیا پر دیکھا اور ہاں میں یہ کر رہا ہوں ، “مرکب کی تصویر والی ایک فیس بک پوسٹ نے کہا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ سانس لینے سے بھاپ …

کرونا اور علماء پاکستان کا رویہ - لمحہ فکریہ Corona & Attitude of Ulema of Pakistan - Point to Ponder

Image
کرونا وائرس نے دنیا میں تباہی مچا کر خوف و ہراس پھیلا دیا ہے- اس وبا سے مسلمان ، کافر ، گورا ، کالا سب بلا تفریق متاثر ہو رہے ہیں-
We cannot move forward as Pakistani and Muslim, unless we tackle this menace of this ignorant , extremist class who are in full control of religion and mislead more ignorant  public. Islam is to be rescued. ... Read more at end of this page ... or <<here>>  مسلمان تقدیر اور موت پر مکمل ایمان رکھتا ہے لیکن تدبیر سے منہ نہیں چھپا تا کیونکہ یہی اسلام کی تعلیم ہے- الله پر توکل ، دعا  کے ساتھ تمام احتیاطی تدابیر اختیار کرنا سنت رسول اللهﷺ سے ثابت ہے جن کا انکار گناہ، تکبر اور جہالت ہے-

ضرور پڑھیں :[ اسلام میں سہولتیں اور آسانیاں ]
 کرونا وائرس خطرہ ، سرد موسم ، بارش میں گھر پر نماز یا مسجد میں دو نمازوں کو ملا کر پڑھنے کی سہولت… [Continue Reading…]قرآن ہدایت و شفاء , طب نبوی ، کرونا وائرس ….  [Continue Reading…]دعائیں اللہ تعالی قبول کیوں نہیں فرماتا؟  … [Continue Reading…]نماز کی اہمیت ، مسائل ، طریقه اور جمع بین الصلاتین … [Continue Reading…]اسلام آ…

Ideological Confusion - نظریاتی اور فکری کنفیوژن اور ممکنہ حل

Image
"ہم ایک ایسے اسلامی تصور کا تعاقب کر رہے ہیں جو انسانیت، جمالیات، دانش اور روحانی عقیدت سے خالی ہے … جس کا تعلق طاقت سے ہے نہ کہ روح سے، عوام کو  حصول اقتدار کے لیے متحرک کیا جاتا ہے نا کہ ان کی مشکلات کے خاتمے اور تمناؤں کے حصول کے لیے." (اقبال احمد)
“We are chasing an Islamic order ‘stripped of its humanism, aesthetics, intellectual quests and spiritual devotions…. concerned with power not with the soul, with the mobilization of people for political purposes rather than with sharing and alleviating their sufferings and aspirations.”[Eqbal Ahmad]

ام الامراض: احمد جاوید ایک حیران کن آدمی ہیں، پاکستان کے دو تین جینوئن دانشوروں میں ان کا شمار کیا جا سکتا ہے۔ قدیم و جدید علوم سے انہیں استفادہ کا موقعہ ملا۔ مولانا ایوب دہلوی جیسے عبقری عالم دین اور متکلم سے انہیں دینی اصول و اسلوب سیکھنے کو ملے۔ سلیم احمد جیسے لیجنڈری ادیب اور دانشور سے برسوں ان کی نشستیں رہیں۔ دراصل یہ پروفیسر محمد حسن عسکری کا سکول آف تھاٹ تھا، جسے سلیم احمد نے قابل قدر اضافوں کے ساتھ آگے بڑھایا۔ !!!!!!!!!!!!…