Featured Post

Wake up Now ! جاگو ، جاگو ، جاگو

Wake up Pakistan ! Presently the Muslim societies are in a state of ideological confusion and flux. Materialism, terrorism,...

Wednesday, April 30, 2014

Media & National Responsibility

میڈیا اور قومی ذمہ داری
نئے ہزاریے کے آغاز پر ممتاز مصنف رابرٹ ڈی کپلان نے نیو یارک ٹائمز میں دنیا کے مستقبل کے بارے میں پیش گوئی کی تھی کہ ''اکیسویں صدی میں سیاسی نظام نہایت خوبصورتی اور بڑے سلیقے سے بدل جائیں گے اور یہ بیسویں صدی کے اختتامی برسوں کی طرح جمہوریت اور اس کے ریاکارانہ تقدس سے آلودہ نہیں ہوں گے‘‘۔ ان کی مابعد جمہوری دنیا میں قومی خود مختاری کا خاتمہ اور قدیم طرز کی مطلق العنان شہری ریاستوں کا احیاء شامل ہے۔ روایتی انداز سے ہٹ کر، نئے تناظر میں سوچنے کے دعوے دار اور نیو امریکہ فائونڈیشن کے سینئر فیلو کپلان نے یہ بھی کہا تھا کہ ''اگلی صدی ہائی ٹیک فیوڈل ازم کا دور ہو گا‘‘۔ کپلان کو اپنے نظریے کے اظہار کا یقیناً حق حاصل ہے اور ان کی پیش گوئی میں کسی حد تک منطق بھی ہے، لیکن نیو یارک ٹائمز نے یہ پیش گوئی جس عامیانہ انداز سے پیش کی، اس سے حیرت ہوئی۔ ایسے لگا، جمہوریت ماضی کا ایک قصہ ہے جس کے بارے میں فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں۔
اِس متکبرانہ رویے سے ابھرتی ہوئی اُس سوچ کی ایک جھلک نظر آئی جو واشنگٹن اور نیو یارک کے مقتدر ایوانوں میں جنم لے رہی ہے، اگرچہ اس کا اظہار بالعموم نہیں کیا جاتا۔ اس سوچ کا ماحصل یہ ہے کہ آزاد منڈی کی قوتیں تیزی سے ہر چیز پر غلبہ حاصل کر رہی ہیں اور انہیں ایسا ہی کرنا چاہیے۔ اس اعتبار سے جمہوریت یعنی عوام کی مرضی، ایک عظیم نصب العین کی جگہ محض ظاہرداری اور حکمرانی کا حق قوم کے منتخب رہنمائوں کو سپرد کرنے کے بہترین ذریعے کے بجائے ترقی کی راہ میں ایک رکاوٹ بن کر رہ جاتی ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ عالمی سطح پر کاروباری مفادات کا محافظ نیا میڈیا تیزی سے آزاد منڈی کی قوتوں کا شراکت دار بنتا جا رہا ہے۔
بلا شبہ، آج کی دنیا میں میڈیا، خاص طور پر الیکٹرانک میڈیا معاشرے کی رگِ حیات ہے، لیکن اس کے ساتھ ساتھ حصول اقتدار کا موثر ہتھیار بھی ہے۔ اُسے اپنی اس طاقت کا کامل ادراک ہے کہ عوام کے ذہن کس حد تک اس کے قابو میں ہیں، یہاں تک کہ ان لوگوں کے اذہان بھی جو میڈیا کو قابل اعتبار نہیں سمجھتے۔ کسی بھی دوسرے ملک کی طرح ہمارا میڈیا بھی قومی زندگی کے تقریباً تمام پہلوئوں اور عالمی معاملات کے بارے میں اطلاعات فراہم کرنے میں زبردست کردار ادا کر رہا ہے۔ Wizard of Oz (ایل فرینک بوم کا 1900ء میں بچوں کے لیے لکھا گیا ناول جس پر 1939ء میں فلم بھی بنی) کی طرح ہمارے عوام 'Wizard boxes‘ (یعنی ٹی وی سیٹ کی سکرین) پر چوبیس گھنٹے نمودار ہونے والے چہروں کے بے شمار ٹاک شو اور نیوز بلیٹن دیکھ اور سُن کر مبہوت ہو جاتے ہیں۔۔۔۔ گرافک امیج‘ اپنی پسند کی چیزوں پر توجہ مرکوز کرانا اور رپورٹنگ کے ذریعے واقعات کے من پسند پہلوئوں کو اجاگر کرنا میڈیا کے ہتھیار ہیں جن کے ذریعے وہ ایک سلطنت کو کنٹرول کرتا ہے اور اسے ریاست کا ''چوتھا ستون‘‘ کہا جاتا ہے۔ حال ہی میں ہمارے میڈیا کے ایک حصے نے ریاست کے اندر ریاست کا کردار ادا کرنا شروع کر دیا۔ یہ سیاسی معاملات میں دخل اندازی کرتا‘ ہماری تاریخ اور تہذیب کی شکل بگاڑتا اور حکمرانی کے اپنے معیارات وضع کرتا ہے؛ یہاں تک کہ کھیلوں‘ فلم اور تھیٹر تک پر اپنی اجارہ داری قائم کرنے کا متمنی نظر آتا ہے۔ یہ ملک کے ہمسایوں کے ساتھ قیام امن کے خواب دکھاتا اور وہاں اپنے حصہ داروں کے ساتھ مل کر اپنا کاروبار بڑھاتا ہے، لیکن اسے احساس تک نہیں کہ اس ملک کے ساتھ ہمارے کئی بڑے تنازعات حل طلب ہیں۔
آزادی سے خبریں ٹیلی کاسٹ کرنے کے زیادہ سے زیادہ چینل خرید لینے کے باعث ان کے براڈ کاسٹر عوام کے سامنے کم سے کم جوابدہ ہو گئے ہیں جس کا نتیجہ یہ ہے کہ آزاد اور مختلف نقطہ نظر پیش کرنے کے مواقع محدود تر ہوتے چلے جا رہے ہیں۔ ہمارے ملک میں میڈیا کی زیادہ سے زیادہ ملکیت حاصل کرنے کی دوڑ نے ملک اور دنیا کے بارے میں خبروں اور دوسری اطلاعات کے معیار پر منفی اثر ڈالا ہے۔ یہ درست ہے کہ ہمارے ملک کی طرح باقی دنیا میں بھی بعض اوقات سیاسی اور ثقافتی منظر پر اثر انداز ہونے کے لیے میڈیا کو غلط طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ اس میں کوئی شبہ نہیں کہ عام فرد پر میڈیا کی اثر پذیری بڑھ رہی ہے اور ہمارے جیسے ملک میں، جس کا طرز حکمرانی ناقص ہو، جو اندرونی طور پر غیر مستحکم ہو، جس کا مستقبل غیر یقینی ہو اور جس میں قانون کی حکمرانی نام کی کوئی چیز نہ ہو، میڈیا کو بہت زیادہ آزادی دینے کے اپنے نقصانات ہیں۔ عوام کے ذہنوں پر میڈیا کا اثر بلکہ تسلط بڑھنے کی وجہ سے اندرون اور بیرون ملک سے مخصوص مفادات کی حامل قوتیں میڈیا پر کنٹرول حاصل کرنے کے لیے پیسہ اور اثر و رسوخ استعمال کر رہی ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ میڈیا لوگوں کی بہتری کے بجائے تیزی سے ایک کمرشل انٹرپرائز کی شکل اختیارکرتا جا رہا ہے۔ اب وقت ہے کہ ہمارا میڈیا قومی امنگوں کی ترجمانی اور ملک کی آزادی و قومی وقار کا دفاع کر کے قومی ذمہ داری نبھائے۔
بدقسمتی سے حالیہ برسوں میں ہماری لبرل اشرافیہ‘ جو ہمارے جوان حکمران طبقے اور میڈیا کے جادگروں پر مشتمل ہے‘ پاک بھارت سرحد کو کاغذ پر کھینچی گئی ایک پتلی سی جعلی لکیر قرار دیتی ہے‘ یہاں تک کہ میڈیا کا ایک حصہ بعض اوقات پاکستان کے وجود تک پر سوالات اٹھا دیتا ہے۔۔۔ وہ بڑی بے باکی سے اس یقین کا اظہار کرنے سے بھی نہیں کتراتا کہ اگر یہ باریک لکیر مٹا دی جائے تو پاکستان اور بھارت کے درمیان کوئی مسئلہ نہیں رہے گا اور ہم ایک قوم کی طرح امن کے ساتھ خوشی خوشی ایک ساتھ زندگی بسر کریں گے‘ اس صورت میں ہمیں افواج کی بھی ضرورت نہیں رہے گی۔ افسوس ہے کہ ان لوگوں کی سوچ غلط ہے‘ انہیں تاریخ پڑھانے کی ضرورت ہے تاکہ وہ جان سکیں کہ پاکستان کا وجود کسی تاریخی حادثے کا نتیجہ نہیں ہے۔
یہ ملک طویل جدوجہد اور بے شمار قربانیوں کے بعد وجود میں آیا تھا۔ اب یہ ایک حقیقت ہے۔ اس کی سرحدیں خون سے کھینچی گئی ہیں جنہیں ہماری حکمران اشرافیہ کے کچھ ارکان اور میڈیا کی طرف سے خیر سگالی پر مبنی بیانات سے ختم نہیں کیا جا سکتا۔ گزشتہ برس پاکستان کے عوام اس وقت ششدر رہ گئے جب ہمارے نظریے کی حفاظت کے دعوے دار ایک انگریزی روزنامے نے بھارت کے ایک معمولی سے لکھاری کو وافر جگہ ( Space ) فراہم کر دی جس نے پاکستان کے وجود تک پر سوالات اٹھائے اور یہاں تک ہرزہ سرائی کی کہ یہ ملک (خدانخواستہ) پندرہ سے بیس سال میں دوبارہ بھارت کا حصہ بن جائے گا۔ ایسا لگتا ہے کہ ہم بے شرمی کی حد تک اپنی بقا کے بارے میں بے حس ہو چکے ہیں۔ ملک کے حالیہ واقعات چشم کشا ہیں۔ یقیناً آزادی اظہار کو ہمارے آئین میں بنیادی حق تسلیم کیا گیا ہے لیکن آرٹیکل 19 میں اس کی حدود و قیود بھی بیان کر دی گئی ہیں۔ اظہار رائے اس بات سے مشروط ہے کہ اس سے اسلام کی عظمت‘ پاکستان یا اس کے کسی حصے کی سلامتی‘ سکیورٹی اور دفاع‘ خود مختار ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات‘ ملک کا امن و امان‘ اخلاقیات‘عدلیہ کا احترام مجروح نہ ہو اور اس سے مجرمانہ سرگرمیوں کی ترغیب نہ ملے۔
اب دنیا کے تمام معاشرے تسلیم کرتے ہیں کہ آزادی اظہار لامحدود نہیں ہونا چاہیے۔ دوسری آزادیوں کی طرح آزاد میڈیا کے غلط استعمال سے بھی غلط بیانی‘ بلیک میل‘ توہین اور کردار کشی کا احتمال ہوتا ہے۔ اس وقت میڈیا کے پاس عالمی سطح کا ایک ایسا مضبوط کیس موجود ہے جس کو مثال بناتے ہوئے وہ اپنی نئی نئی آزادی کی ازخود حدود متعین کر سکتا ہے۔ اس پر قانونی‘ اخلاقی اور تہذیبی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ افراد‘ انسانی گروہوں‘ پورے معاشرے‘ ریاست اور اس کے اداروں کا احترام ملحوظ رکھے۔
اگر میڈیا ریاست کے چوتھے ستون کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں نبھانا چاہتا ہے‘ شفاف حکمرانی اور باشعور جمہوریت کو فروغ دینے کے لیے پُرعزم ہے تو پھر میڈیا ہائوسز کو چاہیے کہ وہ مانیٹرنگ اور جوابدہی کا ایسا طریق کار وضع کریں جس سے غیر ذمہ دارانہ رپورٹنگ کی حوصلہ شکنی ہو۔ حدود سے متجاوز ہوتی ہوئی کمرشل ازم غیر صحت مندانہ رجحان کی نشاندہی کرتی ہے‘ اس لیے یہ ختم ہونی چاہیے۔
اب وقت ہے کہ ہم اپنی آزادی اور وقار کے تحفظ کے نقطہ نظر سے اپنے قومی مفادات کی اندرونی طاقت کا ادراک کریں، مسلح افواج کو ذاتی سوچ سے بالا رکھیں اور حکومت بھی پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کی آزادی کے سلسلے میں ترجیحی بنیاد پر سرخ خطوط کا تعین کرے اور ان پر عوام اور قانون ساز ادارے میں اتفاق رائے پیدا کرنے میں اپنا کردار ادا کرے۔ اسی طرح ہم بہت سے بحرانوں سے محفوظ ہو سکیں گے۔
(کالم نگار سابق سیکرٹری خارجہ ہیں)
By Shams had Ahmed  dunya.com.pk

Monday, April 28, 2014

Violation of Constitution of Pakistan by politicians and rulers

Free%20Books%20%26%20Articles


A constitution is a set of fundamental principles or established precedents according to which a state or other organization is governed.These rules together make up, i.e. constitute, what the entity is. When these principles are written down into a single document or set of legal documents, those documents may be said to embody a written constitution; if they are written down in a single comprehensive document, it is said to embody a codified constitution.
Generally, every modern written constitution confers specific powers to an organization or institutional entity, established upon the primary condition that it abide by the said constitution's limitations. According to Scott Gordon, a political organization is constitutional to the extent that it "contain[s] institutionalized mechanisms of power control for the protection of the interests and liberties of the citizenry, including those that may be in the minority."
The Constitution of India is the longest written constitution of any sovereign country in the world, containing 444 articles in 22 parts, 12 schedules and 118 amendments, with 117,369 words in its English-language translation, while the United States Constitution is the shortest written constitution, at 7 articles and 27 amendments.
It is imperative for the smooth functioning of state that all pillars of state respect the Constitution and respect the rule of law. However unfortunately the politicians (mis)use the law for corruption and to stay in power. This encourages other powerful institutions like Military to step forward and grab the power.
It is trendy to blame Military for violation of Constitution. Do the complainants  themselves honor and respect the Constitution of Pakistan and Law? The corrupt rulers always find loop holes to avoid legally or illegally implementation of law. Here are some examples:

    Pakistan Constitution about defaming Pakistan Army - Tune.pk
  1. tune.pk/.../pakistan-constitution-about-defaming-pa...

    5 days ago
    Constitution of Pakistan about Interest(sound) & Noon League youth loan with ... Geo Doing Propaganda ...
JUDGES, POLITICIAN'S "RESPECT & HONOUR " THE CONSTITUTION & LAW 
Economy is on the slippery slope. Politics and society are in decay as well. What not and what not. The institutions mandated under the law to protect the Constitution are unable to do so. While in power the rulers use ISI and other state institutions for their political advantage and criticise when not in power.
    Nawaz Sharif took 3.5 Million from ISI in 1988 which is now ...

  1. tune.pk/.../nawaz-sharif-took-35-million-from-isi-in...

    nawaz sharif took 3.5 million and shahbaz sharif 2.5 millionfrom Habib Yunas(Ex. 02:50 nawaz ... IMRAN ...
    List of politicians and journalists bribed by Pakistan Army (ISI)
    lubpak.com/archives/1356
    Aug 26, 2009 - List of recipients includes Nawaz Sharif, Abida Hussain, Pir Pagaro, JI ... and received Rs 5 million from the Inter-Services Intelligence to join ...

  1. Nawaz Sharif Is ISI Fabricated Politician - YouTube | Tune.pk

    1. tune.pk/.../nawaz-sharif-is-isi-fabricated-politician-you...
      Nawaz Sharif took 3.5 Million from ISI in 1988 which is now 65.2 Million _ Hasan 01:28 ... Pakistan Nawaz ...
    Nawaz Sharif Corruption - From Pakistan to Park Lane ...


  1. tune.pk/.../nawaz-sharif-corruption-from-pakistan-to-p...
    4 days ago
    Bribe offered to ANP's Senator Qazi Mohammad Anwer (Nawaz Sharif and Others). r. Hudaibiya Paper Mills ...
There are a number of cases before the Supreme Court such as Memo gate case, High Treason Case, NLC, Abotabad Commission Report, Ephedrine case, Hajj corruption case, Drugs case, and many more but these cases have not been decided so far. The Public Accounts Committee has, likewise, been seized of a number of cases of loan write-off. A member of PAC has told me himself that the courts are not taking up their cases. Now all the loan defaulters, tax evaders and fake degree holders have passed through the scrutiny process, they have the justification to say that there was no blot on them as they were declared eligible in every respect as they have been cleared by the Returning Officers under Articles 62 and 63.

CJ Iftikhar Muhammad Chaudhry also Violated Constitution ...

  • tune.pk/.../CJ-Iftikhar-Muhammad-Chaudhry-also-...

    Judicial Coup VS Elected Parliament in Pakistan. http://chagataikhan.blogspot.com/2011/12/judicial-coup-vs ...
  • When Constitution is violated, then court interferes in state ...

    www.samaa.tv/pakistan/.../when-constitution-is-viol...

    Dec 22, 2012
    Staff ReportKARACHI: Chief Justice of Pakistan Iftikhar Muhammad ... in state affairs is wrong; when ..
  • The Supreme Court did talk of scrutiny process taking place as per spirit of Articles 62 and 63 but what has transpired on the ground points to dichotomy between promise and action. The records have proven that cases have been lying pending before the courts for a very long period of time. Media has shown that the erring individuals and parties have had stays on their cases. According to the judicial procedure, the period of stay on legal matters cannot be longer than 6 months. While those having stays on their cases were declared eligible to contest polls, judiciary including the apex court did nothing. 19 cases of fake degrees are lying before the lower judiciary but decisions are not yet forthcoming.
    he ECP was unconstitutional, illegal and immoral; an institution which was composed unconstitutionally, illegally and in whose appointments of members, the laid-down procedure was not followed. How can the nation expect such an institution to preside over fair, free and transparent elections based on justice? 

    A report of loan defaulters was presented in the National Assembly in September 2012. This default took place in a period of last five years. The record is lying with both National Assembly and the Supreme Court. The concerned banks submitted thousands of documents to that effect. Some people did not get their loan written off nor did they pay it back. They rescued themselves from court cases by handing over their disputed properties with the courts. The banks are filing cases against these big people but to no avail. All those documents can be made available to the Election Commission within no time.
    The institutions of Pakistan are not working for the state but for politicians.

    LB Elections, Violation of the Constitution in ...

    www.leela.tv/dunya-news-lb-elections-violation-of-t...

    Jan 2, 2014
    LB Elections, Violation of the Constitution in Punjab and Sindh Join ... Dunya News-Court permits ECP to ...
    Constitution suspension Sue must be from 12 October 1999 , Who ever supported this crime would have been punished without any discrimination including the judges Iftikhar ch who justified the suspension of the Constitution granted powers to amend constitution by one man ( Haha ) and the politicians who supported this unlawful act. 
    HE helped rigging elections..
    Those who had taken oath from Musharraf should be trialed, he maintained Corrupt Rulers are making money in the name of privatization of National Institutions under the guise of Taliban talks and Pervaiz Musharraf’s trial .

    Here is example of "Respect " of constitution & law by holy cows. The PPP Senator Raza Abdi had registered a case against the former chief justice under the Constitution which stated that he had violated the decisions of the judicial council. ( Abdi wad forced to resign). He also said that Parliament was the supreme organ of the state but parliamentarians violated the Constitution frequently
    http://www.dawn.com/news/1100522
    WATCH VIDEO http://www.dailymotion.com/video/x1rjki1_news-beat-26th-april-2014_news

    Politicians have the opyion to disband military.. create new Army with their sons & Kith n kin it shall be law/ constitution abiding and will protect CITIZENS ; help in floods disasters, fight Taliban or other foreign powers.. Lol Cowards never send their sons to Army.. give daughters to Captains and get them out of Army.. Why.? Sons of others to die so that they can rule, plunder .. Where is Hasan Nawaz? In UK..to defend Pakistan or to protect plundered money...
      Be-Reham Scrutiny in Pakistan- Exposed by Hassan Nissar ...

    1. www.dailymotion.com/.../xz7pyi_be-reham-scrutiny-i...
      Apr 22, 2013
      Dr Hassan Mohi ud Din Qadri in Golra Sharif ، خطاب شیخ ڈاکٹر حسن محی الدین ... The Treaty of Hudaibiya, (Sulah Hudaibiya ...
      Haroon ur Rasheed exposing Nawaz Sharif's Corruption ...

    1. tune.pk/.../haroon-ur-rasheed-exposing-nawaz-shari...

      Great Haroon ur Rasheed exposing Nawaz Sharif's 03:01 by zemtvofficial. Nawaz Sharif's Corruption ...

    nawaz sharif corruption details khara sach 10th April 2014 ...

    www.youtube.com/watch?v=NFDiNWC4qGk

    Apr 10, 2014 - Uploaded by rana shafq
    nawaz sharif corruption details khara sach 10th April 2014 mubashir luqman - YouTube. Subscribe 13 .

    Pakistan shares many of Egypt's problems: rampant corruption, social injustice, a growing wealth gap, inflation, total subservience to United States of America. One reason for the rebellions in Egypt and elsewhere was the in-your-face ...
    Why Criticise 1200 politicians ? 
     While discussing corruption, it was pointed out that there are about 1200 politicians in the assemblies, why corruption by these 1200 people is discussed? Are there only 1200 politicians who are corrupt and no one else? ...
    Its true that young officers and soldiers of Pak Army render great sacrifices so that "We can live at peace". But few generals commit a heinous and un-pardonable crime by indulging in any type of corruption or misuse of ...
    Was Pakistan created after lot of efforts and blood of millions for these corrupt cobras? If no, what have you done so far? Least should express your opinion to people around, create awareness to go out to vote for genuinely ...
    Arguably the most dangerous nation on Earth, Pakistan is a bubbling cauldron of corruption and crime, where grasping politicians, greedy generals, drug smugglers, and terrorists intermix in a volatile web, made more ...
    http://pakistan-posts.blogspot.com/2014/04/democracy-or-civilian-dictatorship-in.html

    * * * * * * * * * * * * * * * * * * *
    Humanity, Religion, Culture, Ethics, Science, Spirituality & Peace
    Peace Forum Network
    Over 1,000,000 Visits
    * * * * * * * * * * * * * * * * * * *